٭۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔۔۔٭۔۔۔۔۔۔٭

مسلمان دنیا کی واحد امت ہیں جو ایک ہزارسال پیچھے جاکر ترقی یافتہ ہوسکتےہیں:
انسانی تاریخ کا پہلاہسپتال مسلمانوں نے706 میں مسلمانوں دمشق میں دنیا کا پہلا ہسپتال قائم کیا یہ ہسپتال تین ہیکٹر زمین پر بنائی گئی تھی اس میں صرف آنکھوں کے علاج سات وارڈز تھے، یہ ہسپتال انتہائی خوبصورت تھا اس میں باغاتا، تازہ ہوا کا بندوبست، چہچہاتے ہوئے پرندے حتی کہ موسیقی کا اہتمام بھی تھا، یہاں علاج بالکل مفت اور ہرشخص کے لیے تھا قطع نظران کے رنگ نسل زبان اور مذھب کے، مریضوں اور تیمارداروں کے لیے بھی کھانا مفت ہوتا تھا، مریض کی تندرستی کی تب تصدیق ہوتی تھی کہ جب وہ اکیلے ایک وقت ایک چکن پورا کھائے تب اس کو فارغ کیا جاتاتھا۔
یہ اموی خلیفہ ولید بن عبدالملک کے دورکی بات ہےاس وقت یورپ میں برص کے مریض کو یہ کہہ کرزندہ جلایاجاتا تھا کہ اس پراللہ کا غضب ہوگیا ہے اور مریض کے قریب بھی کوئی نہیں جاتاتھا۔

جن کو تاریخ کا پتہ نہیں ان کا حال اور مستقبل کہاں سے ٹھیک ہوسکتاہے مسلمانوں کو تو دشمنوں کی لکھی ہوئی تاریخ پڑھائی جاتی بلکہ تاریخ کے نام پر جھوٹ پڑھایا گیا ایک ہزار سال کی شاندار تاریخ ہے مسلمانوں نے ہی انسانیت کو عروج پر پہنچایا عدل وانصاف سے دنیا کو روشناس کرایا باقی اقوام تو حیوان سے زیادہ کچھ نہیں تھی بلکہ کچھ نہیں ہیں۔۔۔۔!!!